کورونا وائرس پہلے سے زیادہ طاقتور ہوگیا، نئی قسم کے وائرس نے خطرے کی گھنٹی بجادی، سائنسدانوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی

جاپانی محققین نے دعویٰ کیا ہے کہ نئی برطانوی قسم کا کورونا وائرس سابقہ وائرس کے مقابلے میں زیادہ مہلک ثابت ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ سال کے آغاز سے ہی کورونا وائرس نے ساری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے۔ ایک سال سے زائد عرصہ ہو چکا ہے۔ تمام عالمی برادری کورونا کے خوف تلے زندگی بسر کرنے پر مجبور ہوچکی ہے۔ ماہرین کی جانب سے کورونا ویکسین ایجاد ہونے پر عالمی برادری نے سکھ کا سانس لیا تھا کہ شاید اب موذی وائرس سے جان چھوٹ جائے تاہم وائرس ہے کہ جانے کا نام ہی نہیں لے رہا۔

خبر جاری ہے۔۔۔

اب جاپان کے محققین نے ایک نیا اور خطرناک دعویٰ کردیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ جاپان میں ملنے والا آج کل برطانوی قسم کا وائرس گزشتہ وائرس کے مقابلے میں زیادہ مہلک اور خطرناک ثابت ہوا ہے۔ اس نئی قسم کے وائرس کا تناسب 1 اعشاریہ 32 گنا بنتا ہے۔ یاد رہے کہ برطانیہ میں جس نئی قسم کے وائرس کی تصدیق کی گئی تھی۔ اس وائرس پر جاپان کے قومی انسٹیٹیوٹ برائے وبائی امراض کے محققین کی جانب سے تحقیق کی گئی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

جس سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ نئی قسم کا وائرس پہلے کی نسبت زیادہ خطرناک ہے اور موذی اثر رکھتاہے۔ یاد رہے کہ اس قسم کا وائرس ابھی تک مغربی جاپان کے کانسائی خطے میں پایا جارہا ہے لیکن سائنسدانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ٹوکیو میں بھی اس وائرس کے شکار افراد کی تعداد میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ جس سے خطے میں خطرے کی نئی گھنٹی بج گئی ہے۔ محققین کی جانب سے کہا گیا ہے کہ نئی قسم کے وائرس کو روکنے کے لیے دنیا بھر میں اٹھائے گئے اقدامات ناکافی ہیں۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!