سعودی عرب: 3 فوجیوں کو سنگین غداری کا مرتکب ہونے کی عبرت ناک سزا دے دی گئی

سعودی عرب نے 3 فوجیوں کو غداری کا مرتکب ہونے پر عبرتناک سزا دیتے ہوئے ان کے سرقلم کردیے ہیں۔ تاہم حکومت کی جانب سے کیس کی دیگر تفصیلات جاری نہیں کی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق غداری کی ایک ہی سزا سر تن سے جدا۔ سعودی حکومت نے سنگین غداری کے مرتکب 3 فوجی افسران کے سر قلم کردیے۔ تینوں فوجی وزارت دفاع میں ملازم تھے۔ حکومت کی جانب سے مزید تفصیلات جاری نہیں کی گئی ہیں۔ عالمی میڈیا کے مطابق سعودی حکومت نے سنگین غداری کے مرتکب ہونے والے 3 فوجی افسران کے سرقلم کردیے ہیں۔

خبر جاری ہے۔۔۔

تینوں کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ وزارت دفاع میں ملازم تھے۔ تاہم انہوں نے کس طرح دشمن کی مدد کی یہ نہیں بتایا گیا۔ سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بھی تین فوجیوں کے سرقلم کیے جانے کی تصدیق کی ہے لیکن یہ نہیں بتایا کہ ان کے مقدمے کی کیا تفصیل ہے اور انہوں نے دشمن کو کس طرح راز افشاں کیے۔ شاہی ترجمان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ سزا پانے والے فوجیوں پر باقاعدہ مقدمہ چلایا گیا۔ جس میں ان کا جرم ثابت ہوا اور انہیں موت کی سزا سنائی گئی۔ دوسری جانب ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ فوجیوں نے فوج اور مملکت کے اہم راز ایران نواز حوثیوں کو پہنچائے تھے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

اس طرح وہ ریاست اور فوج کے مفادات کی خلاف ورزی کے مرتکب ہوئے اور انہیں غداری ثابت ہونے پر موت کی سزا سنادی گئی۔ یاد رہے کہ ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سال 2019 میں سعودی عرب نے 184 افراد کو موت کی سزا دی۔ اس حوالے سے چین کا دوسرا اور ایران کا تیسرا نمبر ہے۔ تاہم گزشتہ سال سعودی عرب نے گزشتہ سال صرف 27 افراد کے سرقلم کیے جو گزشتہ کئی سالوں کے تناسب میں سب سے کم شرح ہے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!