وزیراعظم نے کچی آبادی کے مکینوں کو اہم چیز دینے کا اعلان کردیا، آپ بھی جانیے

وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ سکیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئندہ 2 سال میں کچی آبادی کے مکینوں کو نئے گھر فراہم کریں گے۔ کوشش ہے کہ کچی آبادی کے مکینوں کو مالکانہ حقوق فراہم کیے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف نے عام انتخابات 2018 سے قبل اپنے انتخابی منشور میں نعرہ لگایا تھا کہ وہ ایک کروڑ نوکریاں اور 50 لاکھ گھروں کی تعمیر کریں گے۔ یہ مکانات ملک کے ایسے طبقے کے لیے ہوں گے جو آج سے پہلے اپنے گھر کا تصور بھی نہیں کرسکتے تھے۔ اس مقصد کے لیے پی ٹی آئی حکومت نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا اور اس کے تحت اب غریب عوام کو گھروں کی فراہمی کا آغاز کردیا گیا ہے۔ گزشتہ ماہ اسلام آباد میں 2 ہزار فلیٹ غریب عوام میں تقسیم کیے گئے تھے۔ اب وزیراعظم عمران خان نے اسی حوالے سے ایک تقریب میں شرکت کی ہے۔ جہاں انہوں نے کہا ہے کہ انہوں نے غریب آدمی کو سستا گھر بنانے کے لیے سستے قرضوں کی فراہمی ممکن بنائی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں فراش ٹاؤن کی تعمیر ایک شاندار منصوبہ ہے۔ جس پر کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی جانب سے کافی محنت کی گئی ہے۔ یاد رہے کہ اس منصوبے کو ایف ڈبلیو او جیسی بااعتماد تعمیراتی کمپنی شروع کررہی ہے۔ جس نے کرتارپورراہداری کو ریکارڈ مدت میں مکمل کیا تھا۔ وزیراعظم نے امید ظاہر کی ہے کہ فراش ٹاؤن کی تکمیل بھی وقت پر کردی جائے گی۔ اس منصوبے کے تحت 2 ہزار فلیٹ اور 600 گھر کچی آبادی کے مکینوں کو دیے جارہے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا ہے کہ ان کی خواہش ہے کہ کچی آبادی کے مکینوں کے پاس مالکانہ حقوق پر گھر ہوں۔

خبر جاری ہے۔۔۔

عمران خان نے مزید کہا کہ بینکوں کو چھوٹے لوگوں کو قرضے دینے کی عادت نہیں تھی۔ تاہم اب بینک قرض دینے پر راضی ہیں اور اس مقصد کے لیے نت نئی سکیمیں متعارف کروا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ معیشت پر بدقسمتی سے قرضوں کا دباؤ بہت زیادہ ہے۔ حکومت کوشش کررہی ہے کہ قرضوں سے نجات حاصل کرلی جائے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!