پاکستان واپسی کے خواہشمند افراد کے لیے نیا ہدایت نامہ جاری کردیا گیا، اہم شرائط پر عمل کرنا ہوگا

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے کورونا کی لہر پر قابو پانے کے لیے نیا سفری ہدایت نامہ جاری کردیا گیا ہے۔ جس کے تحت پاکستان کا سفر کرنے والے تمام مسافروں کو گھر میں 10 دن کے قرنطینہ کو بیان حلفی دینا ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے جاری کردہ نئے سفری ہدایت نامے کا اطلاق بدھ سے ہوگا۔ جس کے تحت خلیجی یا دیگر ممالک سے پاکستان آنے والے مسافروں کو کورونا ٹیسٹ کروانا ہوگا۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کی جانب سے جاری کردہ نئے ہدایت نامے کے مطابق پاکستان میں داخل ہونے والے مسافر کو 10 دن تک لازمی قرنطینہ کرنا ہوگا۔ اس کے علاوہ پاکستان میں داخلے کے وقت مسافر کو کورونا پی سی آر ٹیسٹ دکھانا ہوگا جو کہ 72 گھنٹے سے پہلے نہ کروایا ہو۔ اس کے علاوہ ایک فوری اینٹیجن ٹیسٹ دنیا بھر کے مسافروں کا ملک کے ہر انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر کیا جاتا ہے۔ جس کا رزلٹ 20 منٹ میں مل جاتا ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

اس ٹیسٹ کے نتیجے میں جن کی رپورٹ منفی آتی ہے ان سے بیان حلفی لیا جاتا ہے کہ وہ اپنے گھر پر 10 دن تک قرنطینہ کریں گے۔ تاہم مثبت رپورٹ آنے والے مسافروں کو فوری طور پر ان کے خرچ پر قرنطینہ کی سہولت دی جاتی ہے۔ اس کے بعد دوسرا پی سی آر ٹیسٹ قرنطینہ کیے جانے کے 8 ویں روز کیا جاتا ہے۔ اگر اس ٹیسٹ کی رپورٹ منفی آجائے تو مسافر کو گھر جانے کی اجازت مل جاتی ہے۔ لیکن اگر اس کے بعد بھی اس کی رپورٹ مثبت آجاتی ہے تو پھر صحت کے حکام کی ہدایات کے مطابق اس شخص کو ہسپتال بھی منتقل کیا جاسکتا ہے۔ یاد رہے کہ اس وقت جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ کراچی میں 48 ہیلتھ ورکرز کی ایک ٹیم مسافروں کے کورونا ٹیسٹ کرنے کے لیے موجود ہے۔ مذکورہ بالا نئی ہدایات کا اطلاق بدھ کی رات 12 بجے سے ہوجائے گا۔ مقامی محکمہ صحت کی ٹیمیں اپنے شہروں کے ہوائی اڈوں پر تعینات کردی جائیں گی۔ جو مسافروں کے ٹیسٹ کریں گی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

دوسری جانب این سی او سی پہلے ہی ملک میں ان باؤنڈ پروازوں کو رواں ماہ کی 5 تاریخ سے لیکر 20 تاریخ تک 80 فیصد تک محدود کرچکی ہے۔ جس کا مقصد ملک میں کورونا کے بڑھتے کیسز کی روک تھام کو یقینی بنانا ہے۔ 5 مئی سے ملک میں چلنے والی 590 پروازوں کو صرف 123 تک محدود کردیا گیا ہے۔ اس کے بعد این سی او سی 18 مئی کو ہونے والے اجلاس میں کورونا کی صورتحال دیکھتے ہوئے پروازوں کو بڑھانے یا نہ بڑھانے کا فیصلہ کرے گا۔ یاد رہے کہ اماراتی فضائی کمپنیاں پہلے ہی پاکستانی حکومت کے فیصلے کی روشنی میں اپنی متعدد پروازیں کم کر چکی ہے۔ اس کے علاوہ کئی پروازیں منسوخ بھی کی گئی ہیں۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!