وزیراعظم اپنے وسیم اکرم پلس کی کارکردگی سے مطمئن نہیں، عمران خان کے قریبی ساتھی نے سنسنی خیز انکشاف کردیا

وزیراعظم کے قریبی ساتھی کی جانب سے انکشاف کیا گیا ہے کہ عمران خان وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی کارکردگی سے مطمئن نہیں۔ وزیراعلیٰ کو کارکردگی دکھانے کے لیے چند ماہ کی مہلت دیدی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان ان دنوں کابینہ میں بڑے پیمانے پر ردوبدل کررہے ہیں۔ انہوں نے تمام وزراء کو ہدایت کررکھی ہے کہ یا تو کارکردگی دکھائیں نہیں تو گھر کو جائیں۔ اب وزیراعظم کی کابینہ میں شامل ان کے ایک انتہائی قریبی ساتھی کی جانب سے سنسنی خیز انکشاف کیا گیا ہے۔ مقامی معتبر اخبار کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم نے پنجاب کے وزیراعلیٰ اور اپنے وسیم اکرم پلس کو آخری تنبیہ جاری کردی ہے۔ وزیراعظم کی جانب سے کہا گیا ہے کہ یا تو کارکردگی دکھائیں نہیں تو نتائج بھگتنے کے لیے تیار ہوجائیں۔ اس کا ایک نتیجہ یہ نکلا ہے کہ عثمان بزدار جو پہلے نہ بیانات میں اور نہ کسی پریس کانفرنس میں نظر آتے تھے۔ اب وہ کم از کم بیانات کی حد تک فعال ہوچکے ہیں۔

خبر جاری ہے۔۔۔

ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم کو خود بھی اپنے انتخاب پر تنقید کا سامنا ہے کیونکہ پنجاب کا ہر شخص ماسوائے عمران خان کے سمجھتا ہے کہ وزیراعلیٰ کو جو ذمہ داری سونپی گئی ہے وہ ان کے اہل نہیں تھے۔ اس حوالے سے جب عمران خان ملاقات کرتے ہیں تو وزیراعلیٰ کو شدید مشکلات کا سامنا رہتا ہے۔ خیال رہے کہ وزیراعظم کی کابینہ بھی عثمان بزدار کی تبدیلی چاہتی ہے اور اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے بھی ایسی خبریں منظرعام پر آرہی ہیں۔ جن میں وہ عمران خان کے انتخاب سے خوش نہیں ہیں۔ جس کا علم اب وزیراعظم کو بھی ہوتا جارہا ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

دوسری جانب ن لیگ کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کی پارٹی عثمان بزدار کی تبدیلی نہیں چاہتی۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ جب تک عثمان بزدار پنجاب میں موجود ہیں۔ ن لیگ کو کوئی خاص اقدامات کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ اس لیے ن لیگ نے اپنے وزراء کو عثمان بزدار کے خلاف بیان بازی سے منع کردیا ہے۔ حکومتی ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب کو حتمی وارننگ دیتے ہوئے بجٹ تک کا وقت دیا گیا ہے۔ جس کے بعد پنجاب میں بڑی تبدیلی آسکتی ہے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!