تبدیلی سرکار کی بجٹ منظوری خطرے میں پڑگئی، ایک اور کھلاڑی کپتان کی پالیسیوں سے دلبرداشتہ ہوگیا

پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی شکور شاد نے عام انتخابات میں بلاول بھٹو زرداری کو لیاری میں شکست دی تھی۔ تاہم مسلسل تحریک انصاف کی پالیسیوں میں نظرانداز کیے جانے پر انہوں نے بجٹ اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی بجٹ منظوری خطرے میں پڑتی جارہی ہے۔ قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 246 سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہونے والے شکورشاد کو کون نہیں جانتا۔ جنہوں نے عام انتخابات میں اس حلقے میں بلاول بھٹو زرداری کو شکست دی تھی۔ تاہم انہوں نے لیاری کو مسلسل نظر انداز کیے جانے کی وجہ سے بجٹ اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے اپنے بیان میں واضح پیغام دیا ہے کہ عمران خان نے لیاری کے منصوبوں کو کوئی اہمیت نہیں دی۔ ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ بلاول بھٹو کو شکست دینے والے کو وفاقی وزیر بناتے لیکن یہاں تو علاقے کے لیے بھی کوئی ریلیف نہیں دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ کپتان کے فیصلوں سے دلبرداشتہ ہوکر بجٹ اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان بھی بجٹ منظور کروانے کے لیے متحرک ہوگئے ہیں اور انہوں نے یہ مشن گورنر پنجاب چودھری سرور کو سونپا ہے۔ ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ چودھری سرور پی ٹی آئی ارکان اسمبلی کو عشائیہ دیں گے۔ گورنر پنجاب نے اعلان کیا ہے کہ بجٹ میں غریب عوام کو ریلیف دینے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ تمام اتحادی حکومت کے ساتھ ہیں اور بجٹ میں بھی ساتھ دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی اتحادیوں کو ساتھ لیکر چلے ہیں اور آئندہ بھی ان کے تحفظات دور کیے جاتے رہیں گے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اپوزیشن دیکھتی رہ جائے گی اور بجٹ منظور بھی ہوجائے گا۔ کیونکہ ایسا پہلے بھی ہوچکا ہے۔ پی ڈی ایم میں اتنی سکت نہیں رہی کہ وہ حکومت کا راستہ روک سکے۔ دوسری جانب ذرائع نے خبر دی ہے کہ تبدیلی سرکار کو اجلاس کے دوران اپوزیشن کی جانب سے احتجاج کا خدشہ ہے۔ جس کے لیے اتحادیوں کو اعتماد میں لیا جا رہا ہے۔ حکومت متعدد قانون پاس کروانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ اس لیے تمام اراکین کو اجلاس میں حاضر رہنے کا کہا گیا ہے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!