سکول کے اوقات کار صبح 5 سے 10 تک فوری تبدیل کیے جائیں، نجی تعلیمی اداروں نے حکومت سے مطالبہ کردیا

لاہور میں سرونگ سکول ایسوسی ایشن کے اہم اجلاس میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ سکول کے اوقات کار فوری تبدیل کیے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق نجی تعلیمی اداروں کی تنظیم کی جانب سے سکولوں کے اوقات کار فی الفور تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ لاہور کے علاقے گلبرگ میں سرونگ سکول ایسوسی ایشن کا اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا۔ جس میں حکومت سے سکولوں کے اوقات کار تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔ ایسویسی ایشن کے صدر میاں رضاء الرحمان نے مطالبہ کیا ہے کہ سکولوں کو صبح 5 سے 10 بجے تک کھولنے کی اجازت دی جائے اور سکول کے اوقات کار میں لوڈشیڈنگ کو روکا جائے۔

انہوں نے کہا کہ بجٹ میں تعلیمی اصلاحات پر توجہ دی جائے اور پاکستان کے شعبہ تعلیم سے تعلق رکھنے والے ماہرین سے تجاویز طلب کی جائیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانات میں لازمی کی بجائے اختیاری مضامین کا امتحان لینا طلبا سے زیادتی کے مترادف ہے۔ یاد رہے کہ ملک میں گرمی کی لہر میں شدت آگئی ہے۔ جس کے بعد وفاقی تعلیمی اداروں کے اوقات کار تبدیل کردیے گئے ہیں۔ جس کا نوٹی فکیشن فیڈرل ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن کی جانب سے جاری کیا گیا ہے۔ جس کے تحت تعلیمی ادارے صبح 7 سے 11 بجے تک کھلے رہیں گے اور طلبا کی حاضری 50 فیصد رہے گی۔

دوسری جانب پنجاب کے وزیرتعلیم مراد راس نے بھی سکولوں کے اوقات کار تبدیل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ میں کہا ہے کہ پنجاب بھر میں تعلیمی ادارے صبح 7 سے 11 بجکر 30 منٹ تک کھلیں گے۔ اس سے قبل ماہر تعلیم آصف گوہر نے ایک بیان میں تجویز دی تھی کہ حکومت پہلی سے آٹھویں جماعت تک کے طلبا کے فوری طور پر امتحانات کا اعلان کردے تاکہ طلبا صبح 7 بجے سکول آکر 9 بجے تک واپس چلے جائیں۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!