امارات میں مقیم پاکستانیوں کے لیے اہم معلومات۔۔ الہسن ایپ پر موجود چھ کیٹیگریز کی وضاحت کر دی گئی

تفصیلات کے مطابق اماراتی وزارت صحت کی جانب سے الہسن ایپ پر گرین پاس نظام کے استعمال کی منظوری دی گئی ہے۔ اس نئے نظام کے تحت ایس او پیز میں نرمی میں مدد ملے گی۔ اس حوالے سے ویکسین کے متعلق چھ کیٹیگریز بنا کر ان کے رنگ اور کوڈ کی وضاحت کی گئی ہے۔ اس طرح مختلف رنگ ظاہر کرتے ہیں کہ کس شخص نے ویکسینیشن مکمل کرلی یا دوسری خوراک لی ہے یا پھر پہلی خوراک لی ہے۔ اس کے علاوہ دوسری خوراک کے منتظر اور تاخیر کا شکار افراد شامل ہیں۔

ایسے افراد جن کو ویکسی نیشن کے عمل سے مستثنی کیا گیا ہو یا وہ افراد جنہوں نے ویکسین نہیں لگوائی۔ ان اقسام کی تفصیل درج ذیل ہے۔ سب سے پہلے انگریزی حرف ای دکھانے والی سبز کیٹیگری ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ آپ نے کورونا کی دوسری خوراک کم از کم 28 دن پہلے لے لی ہے اور آپ کا پی سی آر منفی ہے۔ جس کی وجہ سے انگریزی کا حرف ای ایک ہفتہ تک آپ کی ایپ پر موجود رہے گا۔ اس کے بعد دوسری قسم میں گرین لائٹ 2 ہفتے کے لیے نظر آئے گی۔ جس کا مطلب ہے کہ آپ نے ویکسین کی دوسری خوراک لی ہے لیکن اسے ابھی 28 دن مکمل نہیں ہوئے۔ تیسری کیٹیگری میں وہ لوگ شامل ہیں جو ویکسین کی ایک خوراک لے چکے ہیں اور دوسری خوراک کے منتظر ہیں۔ ان کی پی سی آر رپورٹ منفی ہونے کی وجہ سے ان کی حیثیت بھی سبز دکھائی گئی ہے۔ تاہم انہیں انگریزی کے حرف ای کی حیثیت نہیں دی گئی۔ اس کے بعد چوتھی کیٹیگری ان افراد پر مشتمل ہے۔ جنہوں نے ویکسین کی پہلی خوراک 48 دن یا اس سے بھی قبل لی ہو اور اب ویکسین کی خوراک میں تاخیر کا شکار ہو رہا ہو۔ ان کی پی سی آر رپورٹ منفی آںے کی صورت میں 3 دن تک سبز سٹیٹس شو ہوگا۔

الہسن کی پانجویں کیٹیگری میں شامل افراد کو ویکسی نیشن کے عمل سے استثنیٰ حاصل ہے۔ ان کی منفی رپورٹ پر انہیں سات دن کے لیے سبز رنگ میں رکھا جاتا ہے۔ چھٹے نمبر وہ لوگ ہیں جنہوں نے ویکسین نہیں لگوائی اور نہ ہی انہیں چھوٹ ہے۔ منفی رپورٹ پر ایپ تین دن کے لیے انہیں سبز کیٹیگری میں رکھتی ہے۔ یاد رہے کہ ان تمام کیٹیگریز میں جب پی سی آر کی میعاد ختم ہوجائے تو سبز رنگ کو بھورے رنگ میں تبدیل کردیا جائے گا۔ اگر کسی شخص کا پی سی آر ٹیسٹ مثبت آجاتا ہے تو ایپ میں اسے سرخ رنگ سے ظاہر کیا جائے گا۔ جس کا مطلب ہے کہ اس شخص کو فوری طور پر قرنطینہ کی ضرورت ہے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!