دُبئی ایئرپورٹ پر کچھ مسافروں کو ماسک نہ پہننے کی رعایت مل گئی، کون کون سے مسافر شامل ہیں؟ جانیے

متحدہ عرب امارات میں ایئرپورٹس سمیت تمام عوامی مقامات پر ماسک پہننا لازمی ہے۔ اس معاملے میں اتنی سختی ہے کہ ماسک نہ پہننے والوں پر ہزاروں درہم کے جرمانے کیے جا رہے ہیں۔ تاہم دُبئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی جانب سے کچھ خاص کیٹگریز کے مسافروں کو ماسک پہننے کی پابندی سے رعایت دے دی گئی ہے۔ دُبئی ایئرپورٹ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ تمام مسافر ماسک پہننے کے پابند ہیں۔ کسی مسافر کو بندانا، سکارف یا شال کو ماسک کے طور پر استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ ایمریٹس ایئر لائنز کی جانب سے اپنے مسافروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ پلاسٹک ماسک نہ پہنیں بلکہ صرف کپڑے کے بنے ماسک یا سرجیکل ماسک کا استعمال کریں تاکہ ان کا کورونا سے ممکنہ حد تک تحفظ ہو سکے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

ایمریٹس ایئرلائنز کی جانب سے کہا گیا ہے کہ دُبئی سے جو مسافر دیگر ممالک کا سفر کر رہے ہیں انہیں ان ممالک کے ایئرپورٹس کی ہدایات کے مطابق مخصوص قسم کے ماسک پہننے ہوں گے۔ دُبئی کی حکومت کے قواعد و ضوابط کے مطابق دُبئی سے جرمنی، فرانس اور آسٹریا جانے والوں کے لیے صرف میڈیکل فیس ماسک پہننے کی اجازت ہو گی۔ جبکہ باقی ممالک کا سفر کرنے کے لیے دُبئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پرآ مد سے لے کر بورڈنگ، تمام تر سفر کے دوران اور جہاز سے باہر نکلنے کے وقت بھی کپڑے کا ماسک یا میڈیکل ماسک پہنے رکھنا لازمی ہوگا۔ اس دوران ماسک ہٹانے کی اجازت نہیں ہو گی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

دُبئی ایئرپورٹ کی انتظامیہ کی جانب سے کچھ خاص طبی بیماریوں کے شکار مسافروں کو ماسک نہ پہننے کی رعایت دے دی گئی ہے۔ اسی طرح 6 سال سے کم عمر بچوں کو بھی بغیرماسک کے سفر کرنے کی اجازت ہو گی۔ ایمریٹس ایئر لائنز نے بتایا ہے ”اگر کچھ طبی مسائل کی وجہ سے آپ تمام تر سفر کے دوران ماسک پہننے سے قاصر ہیں تو ایسی صورت میں آپ کو اپنی فلائٹ سے پہلے میڈیکل انفارمیشن فارم (MEDIF) مکمل کرنا ہوگا۔ مندرجہ ذیل بیماریوں کی صورت میں ماسک پہننے کی پابندی اسے استثنیٰ حاصل ہو گا۔
۔ پارکنسن ۔ الزائمر ۔ ڈیمنشیا
۔ ہائیڈرو سیفالس ۔ ڈاؤن سنڈروم ۔ ڈویلپمنٹل ڈیلے
۔ آسٹم سپیکٹرم کنڈیشن
اس کے علاوہ نظام تنفس سے متعلق مندرجہ ذیل بیماریوں کے شکار افراد کو بھی ماسک پہننے سے رعایت حاصل ہو گی۔
۔ Chronic obstructive pulmonary disease (COPD)
۔ جنہیں دل کا دورہ پڑ چکا ہے ۔ استھما ۔ Cystic fibrosis
Source: Khaleej Times

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!