متحدہ عرب امارات میں کورونا کی صورتحال پر قابو پانے کے بعد سرکاری ملازمین کی دفاتر میں واپسی ہوگئی

اماراتی حکومت نے اتوار 16 مئی سے سرکاری دفاتر میں ملازمین کی آمد کا اعلان کردیا ہے۔v

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کے سرکاری ملازمین کو کورونا وائرس کے حوالے سے دی جانے والی تمام رعایات کو منسوخ کردیا گیا ہے۔ یہ اعلان فیڈرل اتھارٹی فار گورنمنٹ ہیومن ریسورس کی جانب سے سوموار کو کیا گیا ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ کورونا کی وجہ سے جن ملازمین کو دفاتر آنے سے روکا گیا تھا۔ اب وہ دفاتر میں کام کریں گے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ نیا قانون 16 مئی بروز اتوار سے نافذالعمل ہوگا۔

تاہم ایسی خواتین جن کے بچے چھوٹے ہیں اور وہ فاصلاتی تعلیم کی وجہ سے مصروف ہیں۔ انہیں یہ رعایت تعلیمی سال کے اختتام تک میسر ہوگی۔ اتھارٹی کی جانب سے ایک سرکلر جاری کیا گیا ہے۔ جس میں کہا گیا ہے کہ جن ملازمین نے ابھی تک کورونا ویکسی نیشن نہیں کروائی وہ دفاتر میں ہر ہفتے پی سی آر ٹیسٹ رپورٹ جمع کروائیں گے۔ تاہم اس رپورٹ کی فیس انہیں خود ادا کرنی ہوگی۔ سرکلر میں مزید کہا گیا ہے کہ ایسے ملازمین جن کی بیماری کی نوعیت ایسی ہے کہ وہ ویکسی نیشن نہیں کروا سکتے اور میڈیکل رپورٹ سے یہ ثابت ہوجائے تو ان کے ٹیسٹ کا خرچ ادارہ برداشت کرے گا۔

سرکلر کے ذریعے تمام فیڈرل اتھارٹیز کو تنبیہ کی گئی ہے کہ وہ کام کی جگہ پر کورونا کی روک تھام کے لیے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کروائیں۔ سماجی فاصلے کا خیال رکھا جائے اور ماسک کا استعمال لازمی کیا جائے۔ تاکہ ملازمین کی صحت کی حفاظت کی جاسکے۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!