امارات میں بھارتی خاوند کی اوچھی حرکت، بچہ حاصل کرنے کے لیے سابقہ بیوی کا جعلی میرج سرٹیفکیٹ بنوا لیا

اماراتی ریاست شارجہ میں ایک بھارتی خاتون نے اپنے چھ سالہ بچے کی پرورش کی ذمہ داری دوبارہ سے حاصل کر لی ہے۔ عدالت میں ثابت ہو گیا کہ 35 سالہ خاتون کے سابقہ شوہر نے بچے کو حاصل کرنے کی خاطر خاتون کے نام کا جعلی میرج سرٹیفکیٹ بنوایا تھا، جس کی آڑ میں اس سے حکام سے بچہ حاصل کر لیا تھا کہ سابقہ بیوی کے دوسری شادی رچانے کی وجہ سے اس کے بچے کی ٹھیک طرح سے دیکھ بھال ممکن نہیں ہو گی۔ تاہم خاتون کے وکیل عبداللہ سلیمان نے ثبوت پیش کر دیئے کہ جو نکاح نامہ پیش کیا گیا وہ جعلی تھا کیونکہ اس میں یہ ظاہر کیا گیا تھا کہ فلاں تاریخ کو خاتون نے بھارت میں دوسری شادی کی ہے۔ حالانکہ اس تاریخ کو خاتون امارات میں ہی موجود تھی۔

استغاثہ کے مطابق یہ خاتون شارجہ کے ایک سرکاری ڈیپارٹمنٹ کی ملازمہ ہے۔ اس خاتون پر سابقہ خاوند نے الزام لگایا تھا کہ اس نے طلاق کے بعد دوسری شادی کر لی ہے، اس لیے ان کے چھ سالہ بچے کو اب اس کے حوالے کر دیا جائے ۔ اس مقصد کے لیے اس شخص نے بھارتی عدالت کی جانب سے جاری کیا گیا ایک میرج سرٹیفکیٹ بھی جمع کروایا۔ خاتون یہ میرج سرٹیفکیٹ دیکھ کر پریشان ہو گئی تھی۔ جسے دیکھتے ہوئے شارجہ شریعت کورٹ نے بچے کو اس کے والد کے حوالے کرنے کا حکم سنایا تھا۔ تاہم خاتون کے وکیل عبداللہ سلیمان نے اس فیصلے کے خلاف اپیل کورٹ سے رجوع کیا تھا اور اعلیٰ عدالت میں ثابت کر دیا کہ سابقہ خاوند کی جانب سے بطور ثبوت پیش کیا گیا نکاح نامہ جعلی ہے۔ اپنے دعوے کے ثبوت میں خاتون کے پاسپورٹ کا ریکارڈ پیش کیا گیا جن سے ثابت ہوتا تھا کہ خاتون پچھلے دو سال سے بھارت نہیں گئی تھی۔ کیونکہ اس پاسپورٹ پر آخری انٹری اور ایگزٹ مہریں دو سال پرانی تھیں۔

اس ثبوت کی مدد سے یہ ثابت ہو گیا کہ خاتون کے سابقہ خاوند نے کورٹ کو گمراہ کرنے کے لیے اس کا جعلی نکاح نامہ تیار کروایا تھا۔ اس مقصد کے لیے ملزم نے بھارت میں موجود ایک شخص کی مدد لی تھی جو بھارتی عدالت کا ہی ملازم تھا۔اپیل کورٹ نے ثبوتوں کو سامنے رکھتے ہوئے بھارتی شہری کی جانب سے بچے کو ماں کی بجائے اس کے حوالے کرنے کی درخواست مسترد کر دی گئی۔ جبکہ جعلسازی پر اس شخص کو سزا کا سامنا بھی کرنا پڑ سکتا ہے۔
Source: Gulf News

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!