امارات میں ڈیٹ پر جانے کے چکر میں سعودی شہری تشدد کا نشانہ بن گیا،اُبلتا ہوا پانی پھینکنے سے بُری طرح جھُلس گیا

دُبئی میں ایک شخص کو نامعلوم حسینہ سے رومانوی ملاقات کی خواہش لے بیٹھی۔ جس کے نتیجے میں وہ شدید تشدد کا نشانہ بن گیا اور اس پر کھولتا ہوا پانی بھی پھینکا گیا جس سے وہ بُری طرح جھُلس گیا ہے۔ 37 سالہ سعودی شہری نے بتایا کہ اس کی ایک ڈیٹنگ ایپ پر نامعلوم حسینہ سے بات چیت ہوئی۔ جس کے بعد دونوں کے درمیان رومانوی ملاقات کا وقت طے ہو گیا۔ خاتون کے بتائے گئے ایڈریس پر وہ البرشا کے ایک اپارٹمنٹ میں پہنچ گیا۔ جہاں پہنچتے ساتھ ہی اسے پتا چلا کہ اس کے ساتھ بڑا دھوکا ہو گیا ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

سعودی شہری نے بتایا ”مجھے اُمید تھی کہ اس اپارٹمنٹ میں کوئی خوبصورت سی لڑکی بے چینی سے میری منتظر ہو گی۔ تاہم جونہی میں اپارٹمنٹ میں داخل ہوا تو مجھے چار افریقی باشندے نظر آئے۔ جنہوں نے مجھے فوری طور پر جکڑ لیا ۔ مجھے پتا چل گیا کہ مجھے محبت کے نام پر بے وقوف بنایا گیا ہے۔ میں نے بھاگنے کی کوشش کی مگر مزاحمت میں ناکام ہو گیا۔ اسی دوران مزید چار پانچ خواتین بھی پہنچ گئیں۔ انہوں نے مجھے باند ھ دیا اور میرا اے ٹی ایم کارڈ چھین لیا۔ مجھے شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا یہاں تک کہ میری آنکھوں اور کانوں پر بھی مُکے مارے گئے اور پھر میرے جنسی اعضاء پر کھولتا ہوا پانی ڈالا گیا، جس سے میرا جسم بُری طرح جھُلس گیا۔ اسی دوران ایک شخص میری ویڈیو بھی بناتا رہا۔ اس تشدد کے نتیجے میں میں بے ہوش ہو گیا۔ جب مجھے ہوش آئی تو میرا موبائل فون قریب ہی پڑا تھا۔ اگرچہ میری حالت بہت خراب تھی۔ تاہم میں ہمت کر کے اُٹھا اور اس بلڈنگ سے باہر آ گیا۔“

خبر جاری ہے۔۔۔

”باہر آنے کے بعد میں نے لوگوں سے کہا کہ میری مدد کرتے ہوئے پولیس کو اطلاع کر دیں۔ فوری طور پر ایک ایمبولینس آئی جس نے مجھے ہسپتال منتقل کر دیا۔ میڈیکل رپورٹس میں بھی تصدیق ہوئی کہ مجھے شدید ترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے اور گرم پانی پھینکنے سے میرا جسم بھی بُری طرح جھُلس گیا ہے۔“ پولیس نے اس واقعے کی رپورٹ درج کرنے کے بعد چار نائیجرین افرادکو گرفتار کر لیا جن کی عمریں 24سے 35 سال کے درمیان ہیں۔ ان ملزمانے نے متاثرہ سعودی کے اے ٹی ایم کارڈ سے 24 سو درہم بھی نکلوا لیے تھے۔ ملزمان پر حبس بے جا، چوری اور تشدد کے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔ اس مقدمے کی اگلی سماعت 23 مارچ 2021ء کو ہو گی۔
Source: The National

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!