اماراتی حکومت نے 20 ہزار درہم بطور انعام دینے کا اعلان کر دیا، انعام حاصل کرنے کے لیے کیا کرنا ہوگا؟ جانیے

اگر آپ امارات میں مقیم ہیں اور آپ کے پاس آئیڈیاز سے بھرا دماغ ہے تو یقین جانیے آپ کے پاس 20 ہزار درہم جیتنے کا نادر موقع ہے۔ بس آپ کو اتنا کرنا ہو گا کہ شارجہ میں کورونا کا خاتمہ کرنے کے لیے کوئی شانداراور قابلِ عمل آئیڈیا دینا ہوگا۔ آپ کا آئیڈیا پسند آنے کی صورت میں 20 ہزاردرہم کی رقم آپ کو مل جائے گی۔ سو شارجہ پولیس کوکورونا کے خاتمے کے لیے اپنا منفرد آئیڈیا بھیجیں اور ‘Open Innovation Award’ جیتنے کا شاندار موقع حاصل کریں۔

خبر جاری ہے۔۔۔

پولیس انوویشن لیب کے لانچ کیے جانے کے بعد شارجہ پولیس نے کورونا سے متعلق یہ اہم اعلان کر دیا ہے کہ تمام عمر اور شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد اپنا آئیڈیا بھیج سکتے ہیں۔ سٹریٹجی اینڈ پرفارمنس ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر کرنل طارق المدفا نے بتایا کہ دو کیٹگریز ’آئیڈیاز‘ اور ’پراجیکٹس‘ میں 20 ہزار درہم کی انعامی رقوم دی جائیں گی۔ اپنا آئیڈیا یا پراجیکٹ بھیجنے کے لیے رجسٹریشن کروانے کی آخری تاریخ 20 مارچ ہے جس کے لیے شارجہ پولیس نے سوشل میڈیا پیجز پر لنک شیئر کر دیا ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

اس انعامی مقابلے کے لیے لوگ انفرادی طور پر بھی آئیڈیاز بھیج سکتے ہیں یا پھر ٹیم کی صورت میں بھی یہ کام کر سکتے ہیں تاہم ٹیم ممبران کی گنتی 4 سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔ امیدواروں کے لیے لازم ہو گا کہ انہوں نے کوئی اور انعامی مقابلہ یا انعامی رقم نہ جیتی ہو۔ یہ آئیڈیاز کورونا کی روک تھام، ریکوری، ویکسی نیشن اور وائرس سے متعلق دیگر معاملات پر ہونے چاہئیں یا پھر ایسا جدید ترین ماڈل بنایا جائے جس سے حکومت کی کورونا کے خلاف جدوجہد زیادہ کامیاب ثابت ہو سکے۔ جیتنے والوں کو 20 ہزار درہم کی رقم دی جائے گی۔ واضح رہے کہ کورونا سے متعلق چیلنجز کا سامنا کرنے کے لیے شارجہ پولیس نے ایک انوویشن لیب لانچ کی ہے جہاں پر اس حوالے سے نئے آئیڈیاز مانگے جا رہے ہیں ۔ شارجہ پولیس کے کمانڈر انچیف میجر جنرل سیف الزیری الشمسی نے کہا کہ اس اقدام سے لوگوں کی کورونا سے متعلق حکومتی اقدامات اور پالیسی کی تشکیل میں بھی شمولیت ہو سکے گی۔ اتھارٹیز کی جانب سے کورونا سے متعلق اہم پہلوؤں وسیع پیمانے کی ٹیسٹنگ، ویکسین لگوانے کے لیے لوگوں کو ترغیب دینا اور پروٹوکولز پر عمل درآمد کرانے کے لیے موثر اقدامات لیے جا رہے ہیں۔

Source: Khaleej Times

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!