شارجہ نے بین الاقوامی مسافروں کے لیے قرنطینہ اور پی سی آر ٹیسٹ سے متعلق ضوابط کی وضاحت کر دی

متحدہ عرب امارات میں سیاحوں اور ویزہ ہولڈرز کو آنے کی اجازت ہے تاہم انہیں قرنطینہ اور پی سی آر ٹیسٹ سے متعلق شرائط پوری کرنا ہوتی ہیں۔ ابوظبی، دُبئی اور شارجہ کے ایئرپورٹس پر اُترنے والے مسافروں کے لیے ان شرائط میں تھوڑا سا فرق ہے، جس کے بارے میں لوگ جاننا چاہتے ہیں۔ ہم آپ کو شارجہ ایئرپورٹ پر اُترنے والے مسافروں کے لیے قرنطینہ اور پی سی آر ٹیسٹ سے متعلق شرائط و ضوابط سے آگاہ کریں گے۔جس کی تفصیلات شارجہ ایئرپورٹ کی ویب سائٹ پر بھی موجود ہیں۔
پی سی آر ٹیسٹ کی شرائط
۔ شارجہ کا سفر کرنے والے تمام ویزہ ہولڈرز، سیاحوں اور خلیجی ممالک کے شہریوں کو پی سی آر ٹیسٹ کروا کر نیگیٹو رپورٹ حاصل کرنا لازمی ہو گی۔ رپورٹ کو فلائٹ کے وقت جاری ہوئے 96 گھنٹے سے زیادہ وقت نہ گزرا ہو۔
۔ شارجہ ایئرپورٹ پر اُترنے والوں کا فوری طور پر ایک اور پی سی آر ٹیسٹ لیا جائے گا۔

قرنطینہ کی شرائط:
۔ تمام مسافروں کو ایئرپورٹ پر پی سی آر ٹیسٹ کروانے کے بعد اپنی رہائش گاہوں پر اس وقت تک قرنطینہ اختیار کرنا ہوگا، جب تک ان کے پی سی آر ٹیسٹ کی رپورٹ موصول نہیں ہو جائے گی۔
۔ اگر کسی مسافر کے پی سی آر ٹیسٹ کی رپورٹ پازیٹو آ جاتی ہے تو ایسی صورت میں اسے 14 روز کے لیے قرنطینہ میں رہنا ہو گا۔ قرنطینہ اور علاج کے تمام تر اخراجات مسافر خود برداشت کرے گا یا اس کا سپانسر یہ خرچہ کرنے کا ذمہ دار ہو گا۔

سفری شرائط:
۔ شارجہ آنے والے ویزہ ہولڈرز کو سفری سے پہلے کوئی پیشگی اجازت لینے کی ضرورت نہیں ہوگی۔شارجہ ایئر پورٹ پر اُترنے والے تمام مسافر بغیر پیشگی اجازت نامے کے شارجہ آ سکتے ہیں۔
۔ سیاحتی ویزے پر جو لوگ شارجہ ایئرپورٹ پر اُتریں گے۔ انہیں پہلے انٹرنیشنل ہیلتھ انشورنس لازمی طور پر کروانی ہو گی۔ ان افراد کو اماراتی موبائل سم بھی حاصل کرنی پڑے گی تاکہ ضرورت پڑنے پر ان سے رابطہ ممکن ہو سکے۔ یہ سم کارڈ انہیں ایئرپورٹ پر پی سی آر ٹیسٹنگ زونز میں ہی مہیا کر دی جائیں گی۔
Source: Khaleej Times

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!