دُبئی پولیس کے اعلیٰ افسر کا شاندار کارنامہ، سمندر میں ڈوبنے والے غیر ملکی کو بچا لیا

دُبئی پولیس کا شمار کارکردگی اور صلاحیت کے اعتبار سے دُنیا کی بہترین پولیس فورسز میں ہوتا ہے۔ اس پولیس فورس کا اعلیٰ سے لے کر جونیئر اہلکار تک سب صلاحیتوں سے مالا مال ہیں۔اسی وجہ سے اس فورس کو اعلیٰ اعزازات سے نوازا جاتا ہے دُبئی کے ایک بڑے پولیس افسر نے بھی ایک شاندار کارنامہ دیتے ہوئے ایک انسان کی جان بچا لی ہے۔ گلف نیوز کے مطابق یہ پولیس اہلکارایک سمندری کشتی میں موجود تھے جب انہوں نے ایک شخص کو ڈوبتے ہوئے دیکھا تو فوری طور پر کشتی اس کے قریب لائے اور چند لمحوں میں اسے کشتی پر سوار کرا لیا ورنہ اس شخص کی موت یقینی ہو چکی تھی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

دُبئی کے پولیس اینڈ جنرل سیکیورٹی کے ڈپٹی چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل ظاہی خلفان تمیم نے یہ کارنامہ انجام دیا ہے۔لیفٹیننٹ جنرل ظاہی نے اپنے سوشل میڈیا کے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بتایا ہے کہ انہوں نے بتایا کہ ایک غیر ملکی دھند کے موسم میں سمندر میں تیراکی کر رہا تھا تاہم دھند گہری ہونے کی وجہ سے وہ کنارے سے دور بھٹک گیا اور بالآخر تھکاوٹ کی وجہ سے اس کی ہمت جواب دے گئی۔ یہ شخص ڈوبنے کے قریب تھا جب انہوں نے اس شخص کو بچا لیا۔ اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر انہوں نے لکھا ہے ”ہم نے ایک غیر ملکی تیراک کو ڈوبنے سے بچا لیا ہے۔“

خبر جاری ہے۔۔۔

لیفٹیننٹ جنرل ظاہی کا کہنا تھا کہ یہ شخص دھند کے موسم میں سمندر کی سیر کو گیا تھا۔ مگر تیراکی کے جوش میں کچھ آگے چلا گیا تو اسے سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ کنارہ کس جانب ہے۔ اتفاق سے ہم لوگ ایک کشتی میں موجود تھے۔ جب ہم نے کسی کو مدد کے لیے چیخ و پکار کرتے سُنا۔ یہ دیکھ کر کشتی کو اس شخص کے قریب لے جایا گیا اور اسے کھینچ کر اس پر سوار کیا گیا۔ یوں اس شخص کی جان بچ گئی ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل ظاہی نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ تیراکی کے شوقین افراد کو دھند کے دوران تیراکی سے باز رہنا چاہیے کیونکہ کئی بار حد نگاہ کم ہونے کی وجہ سے کنارے کا پتا نہیں چل سکتا۔ جس سے انسانی جان کو خطرات لاحق ہو سکتے ہیں۔
Source: Gulf News

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!