متحدہ عرب امارات: منی لانڈرنگ ثابت ہونے پر شہری کو 6 لاکھ درہم جرمانے کی سزا سنا دی گئی

دبئی میں ایک غیر قانونی ایکسچینج ہاؤس چلا رہے شخص پر 6 لاکھ درہم جرمانے کی سزا عائد کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق دبئی کے مرکزی سنٹرل بنک نے ایک غیر قانونی ایکسچینج ایجنسی پر پابندی عائد کردی ہے۔ یہ پابندی اس وقت عائد کی گئی جب ایک شخص اجازت کے بغیر رقم منتقل کررہا تھا۔ مرکزی بینک نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ مذکورہ شخص نے اینٹی منی لانڈرنگ، دہشتگردی کے لیے مالی معاونت کے قانون کو توڑا ہے اور اس کے علاوہ مرکزی بینک اور اس کے مالی سرگرمیوں کو بھی متاثر کرنے کی کوشش کی ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

مرکزی بینک کی جانب سے مذکورہ شہری پر 6 لاکھ درہم کا جرمانہ عائد کیا گیا ہے اور اس کے علاوہ اس سے تحریری یقین دہانی لی گئی ہے کہ وہ آئندہ کبھی بھی غیرقانونی ایکسچینج کو قائم کرنے اور منی لانڈرنگ کی کوشش نہیں کرے گا۔ اماراتی مرکزی بینک نے واضح کیا ہے کہ اماراتی قانون کے آرٹیکل 137 کی شک نمبر 14 کے مطابق مذکورہ شخص کے پاس مرکزی بینک کا اجازت نامہ نہ ہونے کے باوجود وہ ایکسچینج چلا رہا تھا۔

خبر جاری ہے۔۔۔

دوسری جانب ایکدچینج ہاؤس چلانے والی کمیٹی نے کہا ہے کہ مرکزی بینک دبئی میں چل رہے تمام ایکسچینج ہاؤسز کی کڑی جانچ کررہا ہے۔اور دبئی قانون کی خلاف ورزی کرنے والے تمام ایکسچینج ہاؤسز کے ساتھ سختی کے ساتھ نمٹا جائے گا تاکہ ملک میں منی لانڈرنگ کے قانون کا دفاع کیا جاسکے۔
v

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!