پاک امارات فضائی آپریشن معطلی ،پاکستانیوں کی 12مئی سے پہلے واپسی کے لیے دوڑیں لگ گئیں، ایئر لائنز کے لیے بڑا چیلنج بن گیا

متحدہ عرب امارات کی حکومت نے پاکستان، نیپال، بنگلہ دیش اور سری لنکا سے آنے والی تمام پروازوں کی معطلی کا اعلان کر دیا ہے۔ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ یہ پابندی کم از کم دو ہفتے کی ہو سکتی ہے جس کا اطلاق 12 مئی بُدھ کی رات 11:59 پر ہوگا۔ آج اماراتی حکومت کی جانب سے فضائی آپریشن معطل کرنے کا جونہی اعلان ہوا۔ پاکستان میں موجود اماراتی ویزہ ہولڈرز میں پریشانی کی لہر دوڑ گئی۔ لوگوں کی بڑی گنتی نے دھڑا دھڑ بکنگ کروانے کی کوششیں شروع کر دی ہیں۔ تاہم اس معاملے میں بہت کم لوگ خوش نصیب ٹھہریں گے۔ کیونکہ 12 مئی تک صرف دو روز ہی بچے ہیں۔ اس دوران چند فلائٹس ہی موجود ہوں گی، جن پر پہلے سے ہی بکنگ ہو گی۔ اس وقت پاکستانیوں کی جانب سے ایئر لائنز کے دفاتر میں کالز کا تانتا بندھ گیا ہے۔ لوگ منہ مانگی قیمت دے کر واپس جانے کو بھی تیار ہیں۔ ٹریول انڈسٹری ماہرین کا کہنا ہے کہ انہیں کئی لوگوں نے کالز کر کے کہا ہے کہ ان کی ٹکٹ بکنگ کی تاریخ بدل کر آج کل میں کر دی جائے۔ تاکہ ان کی 12 مئی سے پہلے امارات واپسی ممکن ہو سکے۔
MICE اور انٹرنیشنل ٹریول سروسز (ITS) کے شعبہ ہالیڈیز کے مینجر راجا میر وسیم نے بتایا ہے کہ کلائنٹس کی جانب سے دھڑادھڑ کالز موصول ہو رہی ہیں جن میں درخواست کی جا رہی ہے کہ اماراتی حکومت کے پابندی کے اعلان کے بعد اپنے آبائی وطن تعطیلات پر گئے ملازمین کی ٹکٹ کی بکنگ تبدیل کر کے اگلے ایک دو روز کی کر دی جائے تاکہ وہ پابندی کے لاگو ہونے کے وقت سے پہلے پہلے امارات واپس پہنچ جائیں۔ اس صورت حالت میں کمپنیوں کے مالکان بھی بہت پریشان ہیں ، جن کے ملازمین تعطیلات پر پاکستان، بنگلہ دیش، سری لنکا اور نیپال گئے ہیں۔ ان ملازمین کی موجودگی سے ان کے کاموں کا بہت زیادہ خرچ ہو گا۔ پاکستان میں پھنسے جن ملازمین کے فلائٹس شیڈول میں تبدیلی کر دی گئی ہے، انہیں کہا گیا ہے کہ وہ فوراً پی سی آر ٹیسٹ کروا کر نیگیٹو رپورٹ حاصل کریں تاکہ ان کی کل یا پرسوں کی فلائٹ کے ذریعے امارات واپسی میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہو سکے۔ ان کا کہنا تھا کہ جو لوگ امارات سے باہر تفریح منانے کے لیے تعطیلات پر جانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ انہیں موجودہ صورت حال کے پیش نظر اپنے تفریحی پروگرامز کو ملتوی کر دینا چاہیے ۔ کیونکہ بھارت، پاکستان، نیپال، بنگلہ دیش اور سری لنکا سے آنے والے مسافروں پر پابندی کے بعد کچھ یقین سے نہیں کہا جا سکتا کہ مزید ممالک کے مسافروں پر بھی امارات واپسی پر کس وقت پابندی لگ سکتی ہے۔

کہ اماراتی حکومت کی جانب سے چار ممالک پر پابندی کے بعد ٹریول اینڈ ایوی ایشن انڈسٹری کے سامنے بڑا چیلنج بن گیا ہے کیونکہ امارات میں مقیم تارکین کی50 فیصد آبادی کا تعلق ان چار ممالک سے ہے۔ جبکہ سب سے بڑی تارکین کی کمیونٹی بھارت سے ہے۔ جب امارات نے بھارت سے آنے والی پروازوں پر پابندی لگائی تھی تب بھی ٹریول ایجنٹس کو بڑی گنتی میں بھارت میں پھنسے افراد کی جانب سے ٹکٹ کینسل کروانے کی درخواستیں موصول ہوئی تھیں، کیونکہ انہیں کچھ اندازہ نہیں کہ یہ سفری پابندی کب ہٹائی جائے گی۔ اس وقت تازہ ترین پابندی کی زد میں آنے والے ممالک صرف وہی لوگ واپس جا رہے ہیں جنہیں کوئی بھی ایمرجنسی صورت حال کا سامنا ہے یا ان کی کوئی طبی وجوہات ہیں۔ اس کے علاوہ ان ممالک میں عید منانے کے لیے تیار افراد نے اپنی فلائٹس کینسل کروانا شروع کر دی ہیں۔ کیونکہ انہیں نہیں پتا کہ فضائی سفر پر پابندی کب ہٹے گی، اور اگر یہ جلدی نہ ہٹائی گئی تو ان کی واپسی میں بڑی مشکلات کھڑی ہو سکتی ہیں۔
Source: Khaleej Times

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!