متحدہ عرب امارات: سائنسدانوں کا کورونا کے علاج کے لیے اونٹوں پر تجربہ، کامیابی بس ایک قدم دور، سائنسی میدان میں انقلاب لاسکتا ہے!

کورونا وائرس کے مکمل تدارک کے لیے اماراتی سائنسدانوں نے اونٹوں کی مدد لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ اونٹوں کی اینٹی باڈیز پر تحقیق کی جارہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق دبئی کی سنٹرل ویٹرنری ریسرچ لیبارٹری کی جانب سے اونٹوں کی اینٹی باڈیز پر تحقیق کی جارہی ہے۔ جس سے سائنسی میدان میں انقلاب برپا کیا جاسکتاہے۔ لیبارٹری کے سربراہ ڈاکٹر ایریچ ورنرے کے مطابق اس تحقیق کا مقصد یہ جانچنا ہے کہ کیا اونٹوں میں اینٹی باڈیز پیدا کیے جاسکتے ہیں۔ اگر ایسا ہوجاتا ہے تو انسانوں کے علاج میں اسے استعمال کیا جاسکے گا۔ یاد رہے کہ ابھی تک کورونا وائرس کسی بھی اونٹ کو متاثر نہیں کرسکا ہے۔ اس لیے امید کی جارہی ہے کہ اونٹ میں اینٹی باڈیز بنانے کا بہترین نظام موجود ہے۔ اس سے قبل یہ صحرائی جہاز مڈل ایسٹ ریسپائریٹری سینڈروم جیسے مہلک مرض کا شکار ہوچکے ہیں۔ یہ مرض نظام تنفس کو متاثر کرتا ہے۔ اس بیماری میں گردے ناکارہ ہوجانے اور ہضم کرنے کی صلاحیت ختم ہوجانے کی وجہ سے کئی افراد کی موت واقع ہوئی تھی۔

خبر جاری ہے۔۔۔

ڈاکٹر الریچ کے مطابق اونٹ میں قدرتی طور پر وائرس کو قبول کرنے والا خلیہ ہی نہیں ہے لیکن انسانوں اور دوسرے جانوروں میں ایسا نہیں ہے۔ انہوں نے اپنے ایک انٹرویو میں بتایا ہے کہ کورونا وائرس اونٹوں میں داخل تو ہوسکتا ہے لیکن ان پر اثرانداز نہیں ہوسکتا کیونکہ وہ اس صحرائی جہاز کے نظام تنفس تک نہیں پہنچ سکتا۔ یاد رہے کہ ایسا صرف اونٹوں کے ساتھ ہی ہوسکتا ہے اس کے علاوہ باقی تمام جانور یہاں تک کے شیر، چیتے، بلیاں اور آبی نیولے بھی کورونا کا شکار ہوکر اس مرض کو دیگر تک پہنچانے کا سبب بن سکتے ہیں۔ واضح رہے کہ اب تک کی اطلاعات کے مطابق سان ڈیاگو چڑیا گھر کا گوریلا، سرے، برطانیہ میں ایک بلی، برنکس چڑیا گھر کا ایک اور بارسلونا چڑیا گھر کے 4 شیروں میں کورونا رپورٹ ہوچکا ہے۔

خبر جاری ہے۔۔۔

اس کے علاوہ کنٹیکی کے چڑیا گھر میں ایک برفانی چیتا بھی اس وائرس کا شکار ہوچکا ہے۔ لیکن یہاں ایک سکون کی بات یہ ہے کہ جانوروں سے انسانوں میں کورونا منتقل نہیں ہوسکتا اور یہ تحقیقی طور پر ثابت ہے۔ ڈاکٹر ورنرے پرعزم ہیں کہ اس تحقیق کے دور رس نتائج ملیں گے اور سائنسی میدان میں بھی تہلکہ مچے گا۔ اونٹوں کی اینٹی باڈیز سے انسانوں کے علاج میں مدد ملنے سے کورونا کو جڑ سے ختم کیا جاسکے گا۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!