یواےای: کورونا ویکسین نہ لگوانے والے افراد دیگر افراد کے لیے بڑا خطرہ بن گئے، ڈاکٹرز نے اہم بیان جاری کردیا

تحقیق سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ ویکسی نیشن کروانے سے ہسپتال جانے کے خطرات 93 فیصد تک کم ہوجاتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق 40 سالہ باشندہ دبئی کے ہسپتال میں زندگی کی جانب لڑرہا ہے۔ کیونکہ وہ تین ہفتے قبل کورونا کا شکار ہوگیا تھا۔ ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا کہ کورونا کی کس قسم نے اسے متاثر کیا ہے۔ لیکن یہ بات واضح ہے کہ اس نے ابھی تک کورونا کی کوئی ویکسین نہیں لگوائی ہے۔ ایم بی ایک بزنس مین ہے۔ جسے سانس لینے پر دشواری کا سامنا ہوا تو اسے ہسپتال منتقل کیا گیا۔ اسے گزشتہ 4 روز سے تیز بخار تھا۔ لیکن وہ کسی ڈاکٹر کے پاس نہیں گیا کیونکہ اسے لگا کہ کچھ پیناڈول کی گولیاں کھانے سے وہ بہتر ہوجائے گا۔ لیکن اس کی ٹائپ 1 کی شوگر نے حالات مزید خراب کردیے۔ ہسپتال میں حالت تھوڑی سنبھلنےکے بعد ایم بی کا کہنا تھا کہ انہیں سمجھ نہیں آرہی تھی کہ وہ کون سی ویکسین لگوائیں۔ اس لیے انہوں نے سوچا کہ ابھی انتظار کریں اور دیکھیں کہ کس کے نتائج بہترین آتے ہیں۔ لیکن یہ ان کی زندگی کی بڑی غلطی تھی۔ انہوں نے بہت سے ویکیسن کے نتائج سنے۔ اس لیے انہوں نے یہ جانتے ہوئے کہ یہ ان کے لیے خطرناک ہوسکتا ہے۔ ویکسین لگوانے میں تاخیر کی۔ وہ اکثر کام کے سلسلے میں باہر جاتے ہیں اور بہت سے لوگوں سے ملتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں بہت شرمندگی ہے کہ وہ ابھی تک ویکسین نہیں لگوا سکے ہیں۔

انہیں اب ایک وینٹی لیٹر پر منتقل کیا گیا ہے کیونکہ ان کی صحت دن بدن خراب ہورہی ہے۔ عوام کو ویکسی نیشن لگوانے کی ہدایت کرتے ہوئے ڈاکٹرز نے انکشاف کیا ہے کہ ہسپتال میں زیادہ تر داخل ہونے والے مریض وہ ہیں جنہوں نے ویکسین نہیں لگوائی ہے۔ اس کے علاوہ اموات کی شرح بھی ان میں زیادہ ہے۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ کوروناکی کوئی بھی ویکسین لگوائیں کیونکہ یہ آپ کو ہسپتال میں داخل ہونے اور کافی حد تک موت سے بچاتی ہے۔ اگر آپ یہ انتظار کرتے رہیں کہ کوئی نئی آنے والی اچھی ویکسین لگوائیں گے یا دیگر پر ویکسین کا اثر جانچتے رہے تو حقیقت میں آپ نئے اور زیادہ طاقتور کورونا ویری ئنٹ کو اپنی جانب آنے کی دعوت رہے ہیں۔ جو کہ شدید بیماری اور موت کی وجہ بن سکتا ہے۔ دبئی کے میڈیئر ہسپتال میں آئی سی یو انچارج اور کریٹیکل کیئر سپیشلسٹ ڈاکٹر پراسنا کمار کا کہنا ہے کہ ہسپتال کے آئی سی یومیں موجودہ مریض وہ ہیں جنہوں نے ویکسین نہیں لگوائی ہے۔ جس کی وجہ سے زیادہ تر افراد زیادہ شدید بیمار ہوئے ہیں۔ کیونکہ وائرس ویکسی نیشن کروانے والے افراد پر کم اثرانداز ہوتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ویکسینیشن کروانے والے 93 فیصد افراد کو ہسپتال داخل ہونے کی ضرورت محسوس نہیں ہوتی جبکہ 95 فیصد افراد کو آئی سی یو پر منتقل کرنے کی ضرورت نہیں رہتی۔ عوام کو ویکسین لگوانے کی ترغیب دلاتے ہوئے ڈاکٹر کا مزید کہنا تھا کہ ویکسین ہی واحد ٹول ہے۔ جس کی مدد سے وہ کورونا کے خلاف جنگ لڑ سکتے ہیں۔ ہاتھ دھونا اور سماجی فاصلے کا خیال رکھنا کبھی نہ بھولیں۔ اس کے علاوہ یہ سب کی ذمہ داری ہے کہ وہ ویکسین لگوائیں۔

یاد رہےکہ کورونا ویکسی نیشن مہم کی کامیابی کی وجہ سے گزشتہ 2 ہفتوں سے یواےای میں کورونا کے یومیہ مریضوں کی تعداد 1600 سے کم ہے۔ جب کہ 76 فیصد سے زائد اماراتی شہری کورونا کی کم از کم ایک اور 66 فیصد شہری ویکسی نیشن مکمل کرچکے ہیں۔ پرائم ہسپتال دبئی کے ڈاکٹر عدیل السیسی کا کہنا ہے کہ ہسپتال میں ویکسی نیشن مکمل کروالینے والے، ایک خوراک لگوانےوالے اور ویکسی نیشن نہ کروانے والے ہر طرح کے مریض آتےہیں۔ لیکن سب سے زیادہ تیزی سے وائرس ویکسین نہ لگوانے والے افراد میں پھیلتا ہے اور وہ اپنی زندگی کے لیے جنگ لڑ رہے ہیں۔ ان میں سے بہت سے افراد کو زندہ رکھنے کے لیے وینٹی لیٹر پر منتقل کردیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ موت کی شرح ویکسین نہ لگوانے والے مریضوں میں زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ سب کو ہدایت کرتے ہیں کہ مہلک وائرس سے خود کو اور اپنے چاہنے والوں کو محفوظ رکھنے کے لیے کورونا ویکسین ضرور لگوائیں۔

Show More

Related Articles

Back to top button
error: Content is protected !!